جب لے کے ہتھیلی پر ہم جان نکلتے ہیں

معین شاداب

جب لے کے ہتھیلی پر ہم جان نکلتے ہیں

معین شاداب

MORE BYمعین شاداب

    جب لے کے ہتھیلی پر ہم جان نکلتے ہیں

    ظلمت میں اجالوں کے امکان نکلتے ہیں

    پھر لے کے حساب دل پچھتانا پڑا اس کو

    کچھ اس پہ ہمارے ہی احسان نکلتے ہیں

    یہ شہر رہا ہوگا شائستہ مزاجوں کا

    اس شہر کے ملبے سے گلدان نکلتے ہیں

    اے اہل نظر تیرے خطبات پہ بھاری ہیں

    دیوانے کے منہ سے جو ہذیان نکلتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY