جب ریتیلے ہو جاتے ہیں

فہمی بدایونی

جب ریتیلے ہو جاتے ہیں

فہمی بدایونی

MORE BY فہمی بدایونی

    جب ریتیلے ہو جاتے ہیں

    پربت ٹیلے ہو جاتے ہیں

    توڑے جاتے ہیں جو شیشے

    وہ نوکیلے ہو جاتے ہیں

    باغ دھوئیں میں رہتا ہے تو

    پھل زہریلے ہو جاتے ہیں

    ناداری میں آغوشوں کے

    بندھن ڈھیلے ہو جاتے ہیں

    پھولوں کو سرخی دینے میں

    پتے پیلے ہو جاتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY