جب شام ہوئی میں نے قدم گھر سے نکالا

ثروت حسین

جب شام ہوئی میں نے قدم گھر سے نکالا

ثروت حسین

MORE BYثروت حسین

    جب شام ہوئی میں نے قدم گھر سے نکالا

    ڈوبا ہوا خورشید سمندر سے نکالا

    ہر چند کہ اس رہ میں تہی دست رہے ہم

    سودائے محبت نہ مگر سر سے نکالا

    جب چاند نمودار ہوا دور افق پر

    ہم نے بھی پری زاد کو پتھر سے نکالا

    دہکا تھا چمن اور دم صبح کسی نے

    اک اور ہی مفہوم گل تر سے نکالا

    اس مرد شفق فام نے اک اسم پڑھا اور

    شہزادی کو دیوار کے اندر سے نکالا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY