جب اس نے نہیں دیکھا جب اس کو نہیں بھائی

خورشید ربانی

جب اس نے نہیں دیکھا جب اس کو نہیں بھائی

خورشید ربانی

MORE BYخورشید ربانی

    جب اس نے نہیں دیکھا جب اس کو نہیں بھائی

    کس کام کی آرائش کس کام کی زیبائی

    یہ کار محبت بھی کیا کار محبت ہے

    اک حرف تمنا ہے اور اس کی پذیرائی

    اک پل کی مسافت تھی اس دل سے ترے دل تک

    اس راہ میں بھی لیکن اک عمر بتا آئی

    جب کوئی اسے دیکھے بس دیکھتا رہ جائے

    یہ حسن کی خوبی ہے یہ حسن کی یکتائی

    یہ موج ہوا یوں ہی اتراتی نہیں پھرتی

    اس پھول سے مل آئی خوشبو بھی چرا لائی

    اک زرد سا پتہ تھا جب شاخ سے بچھڑا تھا

    میں راہ میں بکھرا تھا جب موج ہوا آئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY