جیسے تیسے نکال لیتے ہیں

تاثیر جعفری

جیسے تیسے نکال لیتے ہیں

تاثیر جعفری

MORE BYتاثیر جعفری

    جیسے تیسے نکال لیتے ہیں

    چند لمحے نکال لیتے ہیں

    خود ہی سیتے ہیں زخم دل کے ہم

    خود ہی دھاگے نکال لیتے ہیں

    اپنے چہرے سے اک نیا چہرہ

    لوگ کیسے نکال لیتے ہیں

    نام لے کے تمہارا دکھ ہم سے

    اشک سارے نکال لیتے ہیں

    پھر سمندر لگے گا نیلا فلک

    گر ستارے نکال لیتے ہیں

    تیری یادوں کے بحر سے اب ہم

    شعر اچھے نکال لیتے ہیں

    مشکلات جہان سے تاثیرؔ

    سچے جذبے نکال لیتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY