جہل خرد نے دن یہ دکھائے

جگر مراد آبادی

جہل خرد نے دن یہ دکھائے

جگر مراد آبادی

MORE BYجگر مراد آبادی

    جہل خرد نے دن یہ دکھائے

    گھٹ گئے انساں بڑھ گئے سائے

    ہائے وہ کیونکر دل بہلائے

    غم بھی جس کو راس نہ آئے

    ضد پر عشق اگر آ جائے

    پانی چھڑکے آگ لگائے

    دل پہ کچھ ایسا وقت پڑا ہے

    بھاگے لیکن راہ نہ پائے

    کیسا مجاز اور کیسی حقیقت

    اپنے ہی جلوے اپنے ہی سائے

    جھوٹی ہے ہر ایک مسرت

    روح اگر تسکین نہ پائے

    کار زمانہ جتنا جتنا

    بنتا جائے بگڑتا جائے

    ضبط محبت شرط محبت

    جی ہے کہ ظالم امڈا آئے

    حسن وہی ہے حسن جو ظالم

    ہاتھ لگائے ہاتھ نہ آئے

    نغمہ وہی ہے نغمہ کہ جس کو

    روح سنے اور روح سنائے

    راہ جنوں آسان ہوئی ہے

    زلف و مژہ کے سائے سائے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگر مراد آبادی

    جگر مراد آبادی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جہل خرد نے دن یہ دکھائے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY