جھوٹے وعدوں پر تمہاری جائیں کیا

امداد امام اثرؔ

جھوٹے وعدوں پر تمہاری جائیں کیا

امداد امام اثرؔ

MORE BYامداد امام اثرؔ

    جھوٹے وعدوں پر تمہاری جائیں کیا

    جانتے ہیں تم کو دھوکا کھائیں کیا

    پرسش اپنے قتل کی ہونے لگی

    داور محشر کو ہم بتلائیں کیا

    ان کی محفل حیرت عالم سہی

    غیر ہم پہلو جہاں ہو جائیں کیا

    خون دل کھانے سے کچھ انکار ہے

    جب نہیں اے لذت غم کھائیں کیا

    ناصح مشفق کو سمجھانا پڑا

    اس سمجھ پر تم کو وہ سمجھائیں کیا

    غیر نے رہ کر جہنم کر دیا

    ہیں مسلماں تیرے گھر ہم آئیں کیا

    ہم سے ان سے بات کیا باقی رہی

    ہم کہیں کیا اور وہ فرمائیں کیا

    ہے پشیمانی میں اقرار خطا

    قتل کر کے مجھ کو وہ پچھتائیں کیا

    آئیں گے پھر بھی وہی عشرت کے دن

    انقلاب دہر سے گھبرائیں کیا

    مر ہی کر اٹھیں گے تیرے در سے ہم

    آ کے جب بیٹھے تو پھر اٹھ جائیں کیا

    دل کو کھوئے ایک مدت ہو گئی

    اے اثرؔ اب ڈھونڈنے سے پائیں کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے