جس دل ربا سوں دل کوں مرے اتحاد ہے

ولی محمد ولی

جس دل ربا سوں دل کوں مرے اتحاد ہے

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    جس دل ربا سوں دل کوں مرے اتحاد ہے

    دیدار اس کا میری انکھاں کی مراد ہے

    رکھتا ہے بر میں دلبر رنگیں خیال کوں

    مانند آرسی کے جو صاف اعتقاد ہے

    شاید کہ دام عشق میں تازہ ہوا ہے بند

    وعدے پہ گل رخاں کے جسے اعتماد ہے

    باقی رہے گا جور و ستم روز حشر لگ

    تجھ زلف کی جفا میں نپٹ امتداد ہے

    مقصود دل ہے اس کا خیال اے ولیؔ مجھے

    جیوں مجھ زباں پہ نام محمد مراد ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY