Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جس منزل مقصود پہ دم ٹوٹ رہا ہے

صوفیہ دیپیکا کوثر

جس منزل مقصود پہ دم ٹوٹ رہا ہے

صوفیہ دیپیکا کوثر

MORE BYصوفیہ دیپیکا کوثر

    جس منزل مقصود پہ دم ٹوٹ رہا ہے

    لگتا ہے مرا خواب ارم ٹوٹ رہا ہے

    اشکوں پہ مجھے ضبط کا اک فخر تھا لیکن

    وہ سنگ یقیں تیری قسم ٹوٹ رہا ہے

    لیلیٰ سے کہو راہ جنوں میں نکل آئے

    صحرا میں کہیں قیس کا دم ٹوٹ رہا ہے

    ہر شوق ہر امید ہر اک آرزو سالم

    اک دل تھا ترے زیر قدم ٹوٹ رہا ہے

    اک بار مرے چاند کو گہنایا تھا اس نے

    سورج پہ یوں راتوں کا ستم ٹوٹ رہا ہے

    اک عمر گزاری ہے تری یاد میں کوثرؔ

    آ جا کہ مری زلف کا خم ٹوٹ رہا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے