جس طرح ہاتھ کی چوڑی کا کھنکنا طے ہے

نیلوفر نور

جس طرح ہاتھ کی چوڑی کا کھنکنا طے ہے

نیلوفر نور

MORE BYنیلوفر نور

    جس طرح ہاتھ کی چوڑی کا کھنکنا طے ہے

    ٹھیک ویسے ہی مرے دل کا دھڑکنا طے ہے

    لوٹ آئے ہیں تجھے غیر کی قسمت کر کے

    آج کی رات تو آنکھوں کا چھلکنا طے ہے

    کیفیت دل کی اگر تو نے دکھائی مجھ کو

    آئینے پھر تو مرا تجھ پہ بھڑکنا طے ہے

    میں نے الفاظ نہیں درد پرو رکھے ہیں

    یہ غزل سن کے مری جان سسکنا طے ہے

    بے حسی نے تو بنا ڈالا تھا پتھر مجھ کو

    اس تبسم سے تو آنچل کا ڈھلکنا طے ہے

    کچھ خبر بھی ہے تجھے دل کو جلانے والے

    زخم کھلتے ہیں تو پھر ان کا مہکنا طے ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے