Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جو بیچ میں آئنہ ہو پیارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

شاد لکھنوی

جو بیچ میں آئنہ ہو پیارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

شاد لکھنوی

MORE BYشاد لکھنوی

    جو بیچ میں آئنہ ہو پیارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    تو پھر ہوں باہم دگر نظارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    جو کچھ گزرتی ہے دل پہ پیارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    کہیں وہ کس سے عدو ہیں سارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    چلے وہ باد مراد ہمدم جو بحر غم سے نکالے باہم

    خوشی کے بجرے لگیں کنارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    خوشی تھی خلوت نشیں تھے باہم مخل ہوا غیر آ کے جس دم

    تو ہوش و عقل و خرد سدھارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    نصیب اگر پھر ہوئی وہ صحبت بہم جو گزری میان عشرت

    تو کام بگڑے خدا سنوارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    خدا دکھائے جو وصل کی شب خوشی سے گل گل شگفتہ ہوں سب

    جو داغ دل پر ہیں غم کے مارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    ملا ہے تم کو جو شہر خوبی تو ملک غم کے ہیں ہم بھی والی

    ہوئے ہیں کشور دو اجارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    جو بات کرتے نہ غیر دیتے جھکا کے آنکھیں ہی دیکھ لیتے

    کہ ہوتے باہم دگر اشارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    خبر نہ افشاں کی ہم جھلک سے نہ تم خبر درد کی چمک سے

    کچھ ان دنوں میں برے ستارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    نکالو وصلت کی تم جو راہیں کروں میں رہ رہ کے گرم آہیں

    جہاز دودی لگیں کنارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    خدا اٹھائے یہ پردۂ غم جو مل کے ہم تم ہوں شادؔ باہم

    تو کیسی شادی ہو گھر میں پیارے ادھر ہمارے ادھر تمہارے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے