جو غم میں جلتے رہے عمر بھر دیا بن کر

آزاد گلاٹی

جو غم میں جلتے رہے عمر بھر دیا بن کر

آزاد گلاٹی

MORE BYآزاد گلاٹی

    جو غم میں جلتے رہے عمر بھر دیا بن کر

    بجھا گئی ہے انہیں موت اب ہوا بن کر

    وہ خامشی جو تری بزم نے ہمیں بخشی

    خلائے ذہن میں گونجی ہے اک صدا بن کر

    جو تو نے مجھ کو غم لا زوال بخشا تھا

    وہ زندگی میں رہا میرا رہنما بن کر

    وہ جن کے لمس سے تو کھل کے پھول بنتا تھا

    وہ اب بھٹکتے ہیں در پر ترے صبا بن کر

    جب ان کی بزم سے لوٹے تو خود کو پہچانا

    وہاں سے آئے ہم آزادؔ کیا سے کیا بن کر

    مآخذ
    • کتاب : Dasht-e-Sada (Pg. 109)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY