aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جو ہوا وہ ذہن میں تھا نہیں جو تھا ذہن میں وہ ہوا نہیں

احتشام الحق صدیقی

جو ہوا وہ ذہن میں تھا نہیں جو تھا ذہن میں وہ ہوا نہیں

احتشام الحق صدیقی

MORE BYاحتشام الحق صدیقی

    جو ہوا وہ ذہن میں تھا نہیں جو تھا ذہن میں وہ ہوا نہیں

    جو گمان میں نہ تھا مل گیا جو تھا ہاتھ میں وہ ملا نہیں

    وہ جو ہم میں تم میں تھا فاصلہ یہ کمال اس کے سبب ہوا

    وہ سنا گیا جو کہا نہیں جو کہا گیا وہ سنا نہیں

    وہی کبر ہے مری خاک میں وہی جہل ہے مری ذات میں

    جو شرار ہے وہ بجھا نہیں جو چراغ ہے وہ جلا نہیں

    وہی تھی ہوا وہی تھی فضا ہمیں بس پروں کو تھا کھولنا

    تجھے خوف تھا تو اڑا نہیں مجھے شوق تھا میں رکا نہیں

    سم ذات ہو سم کن‌ فکاں سم غیر ہو سم دوستاں

    کوئی زہر مجھ سے بچا نہیں کوئی زہر تم نے پیا نہیں

    وہ تو ختم کہہ کے گزر گیا میں خیال ہجر سے مر گیا

    وہ گیا تو پیچھے مڑا نہیں میں کہیں یہاں سے گیا نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے