Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جو خط ہے شکستہ ہے جو عکس ہے ٹوٹا ہے

حفیظ بنارسی

جو خط ہے شکستہ ہے جو عکس ہے ٹوٹا ہے

حفیظ بنارسی

MORE BYحفیظ بنارسی

    جو خط ہے شکستہ ہے جو عکس ہے ٹوٹا ہے

    یا حسن ترا جھوٹا یا آئنہ جھوٹا ہے

    ہم شکر کریں کس کا شاکی ہوں تو کس کے ہوں

    رہزن نے بھی لوٹا ہے رہبر نے بھی لوٹا ہے

    یاد آیا ان آنکھوں کا پیمان وفا جب بھی

    ساغر مرے ہاتھوں سے بے ساختہ چھوٹا ہے

    ہر چہرے پہ لکھا ہے اک قصۂ مظلومی

    بے درد زمانے نے ہر شخص کو لوٹا ہے

    منزل کی تمنا میں سر گرم سفر ہیں سب

    کون اس کے لیے روئے جو راہ میں چھوٹا ہے

    اللہ رے حفیظؔ اس کا یہ ذوق خود آرائی

    جب زلف سنواری ہے اک آئنہ ٹوٹا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Safeer-e-shar-e-dil (Pg. 354)
    • Author : Hafeez Banarsi
    • مطبع : Hafeez Banarsi (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے