جو نام سب سے ہو پیارا اسے مکان پہ لکھ

کرامت علی کرامت

جو نام سب سے ہو پیارا اسے مکان پہ لکھ

کرامت علی کرامت

MORE BYکرامت علی کرامت

    جو نام سب سے ہو پیارا اسے مکان پہ لکھ

    بدن کی حد سے گزر اور اس کو جان پہ لکھ

    بجا ہے کرتے ہیں پانی پہ دستخط سب لوگ

    جو حوصلہ ہے تو نام اپنا آسمان پہ لکھ

    تو لکھنے بیٹھا ہے میرے خلوص کا قصہ

    یقین پر نہیں لکھتا نہ لکھ گمان پہ لکھ

    صحیفۂ دل بیتاب کی نئی تفسیر

    قلم اٹھا اور اسے وقت کی زبان پہ لکھ

    سفر مدام سفر ہی تو ہے سفر کا صلہ

    تو اپنا قصۂ لا سمتیت اڑان پہ لکھ

    سنوار شانۂ فن سے تو زلف قوس قزح

    تو زندگی کے خم و پیچ پھر کمان پہ لکھ

    جو ''قل'' مسور پہ لکھتے ہیں ان کا فن ہے جدا

    تو خون دل سے کوئی شعر مرتبان پہ لکھ

    ہر ایک چیز یہاں پریم ہی سے ملتی ہے

    یہ اشتہار کرامتؔ تو ہر دکان پہ لکھ

    مأخذ :
    • کتاب : Shakhe Sanobar (Pg. 201)
    • Author : Karamat Ali Karamat
    • مطبع : Kamran Publications,Odisha (2006)
    • اشاعت : 2006

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY