جو وہ مرے نہ رہے میں بھی کب کسی کا رہا

کیفی اعظمی

جو وہ مرے نہ رہے میں بھی کب کسی کا رہا

کیفی اعظمی

MORE BYکیفی اعظمی

    جو وہ مرے نہ رہے میں بھی کب کسی کا رہا

    بچھڑ کے ان سے سلیقہ نہ زندگی کا رہا

    لبوں سے اڑ گیا جگنو کی طرح نام اس کا

    سہارا اب مرے گھر میں نہ روشنی کا رہا

    گزرنے کو تو ہزاروں ہی قافلے گزرے

    زمیں پہ نقش قدم بس کسی کسی کا رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY