جنوں کم جستجو کم تشنگی کم

جگر مراد آبادی

جنوں کم جستجو کم تشنگی کم

جگر مراد آبادی

MORE BYجگر مراد آبادی

    جنوں کم جستجو کم تشنگی کم

    نظر آئے نہ کیوں دریا بھی شبنم

    بحمداللہ تو ہے جس کا ہمدم

    کہاں اس قلب میں گنجائش غم

    توجہ بے نہایت اور نظر کم

    خوشا یہ التفات حسن برہم

    مری آنکھوں نے دیکھا ہے وہ عالم

    کہ ہر عالم ہے لغزش ہائے پیہم

    خطا کیونکر نہ ہوتی عافیت سوز

    کہ جنت ہی نہ تھی معراج آدم

    خوشا یہ نسبت حسن و محبت

    جہاں بیٹھے نظر آئے ہمیں ہم

    وہ اک حسن سراپا اللہ اللہ

    کہ جس کی ہر ادا عالم ہی عالم

    کہاں پہلوئے خورشید جہاں تاب

    کہاں اک نازنیں دوشیزہ شبنم

    مسرت زندگی کا دوسرا نام

    مسرت کی تمنا مستقل غم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY