جنوں میں ریت کو یوں ہی نہیں نچوڑا تھا

پون کمار

جنوں میں ریت کو یوں ہی نہیں نچوڑا تھا

پون کمار

MORE BY پون کمار

    جنوں میں ریت کو یوں ہی نہیں نچوڑا تھا

    کسی کی پیاس زیادہ تھی پانی تھوڑا تھا

    پھر اس کے بعد تو آنکھوں سے نیند غائب تھی

    کسی خیال نے احساس کو جھنجھوڑا تھا

    تمام عمر بھٹکتے رہے تھے وحشت میں

    بس ایک مرتبہ ہم نے حصار توڑا تھا

    وجود رکھنا تھا اپنی شناخت کھو کر بھی

    ندی نے خود کو سمندر کی سمت موڑا تھا

    یہ مشکلات اسی راہ میں نہ آنی تھیں

    میں جو بھی راستہ چنتا اسی میں روڑا تھا

    بکھر گئے تھے مرے گرد درد کے سکے

    تمہاری یاد کی گلک کو رات توڑا تھا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    پون کمار

    پون کمار

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY