جوں گل ازبسکہ جنوں ہے مرا سامان کے سات

ولی عزلت

جوں گل ازبسکہ جنوں ہے مرا سامان کے سات

ولی عزلت

MORE BYولی عزلت

    INTERESTING FACT

    کلاسیکی شاعری میں ردیف سات اور ساتھ ایک دوسرے کی جگہ استعمال ہوتے تھے

    جوں گل ازبسکہ جنوں ہے مرا سامان کے سات

    چاک کرتا ہوں میں سینے کو گریبان کے سات

    چشم تر ہیں مری صحرا ہے جنوں کی ممنوں

    ربط ہے رونے کوں میرے اسی دامان کے سات

    بے خودی کا ہے مزہ شور اسیری سے مجھے

    رنگ اڑے ہے مرا زنجیر کی افغان کے سات

    جوں بگولہ ہوں میں منت کش صحرا گردی

    زندگانی ہے مری سیر بیابان کے سات

    عزلتؔ اس باغ میں لالہ سا ہوں میں درد نصیب

    دل زخمی سے اگا داغ نمک دان کے سات

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    جوں گل ازبسکہ جنوں ہے مرا سامان کے سات فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY