کعبۂ دل کو اگر ڈھایئے گا

حقیر

کعبۂ دل کو اگر ڈھایئے گا

حقیر

MORE BY حقیر

    کعبۂ دل کو اگر ڈھایئے گا

    یاد رکھئے کہ سزا پائیے گا

    یاد میں میری جو گھبرائیے گا

    میری تربت پہ چلے آئیے گا

    تھوڑی تکلیف سہی آنے میں

    دو گھڑی بیٹھ کے اٹھ جائیے گا

    یاد دلوا کے وہ اگلی باتیں

    بھری محفل میں نہ رلوائیے گا

    حال دل کہیے تو فرماتے ہیں

    بکتے بکتے مرا سر کھائیے گا

    یک ذرا آپ کو ہم دیکھ تو لیں

    بیٹھیے بیٹھیے پھر جائیے گا

    یہ حقیرؔ آپ سے ڈرنے کا نہیں

    آنکھیں بس غیر کو دکھلائیے گا

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY