کام آئے گی تری کھوج میں ظلمت ایسی

راحت حسن

کام آئے گی تری کھوج میں ظلمت ایسی

راحت حسن

MORE BY راحت حسن

    کام آئے گی تری کھوج میں ظلمت ایسی

    کس کو معلوم تھا بن جائے گی صورت ایسی

    بے سبب پڑ گئے ہیں جان کے لالے اب کے

    بے ضرورت ہی نکل آئی ضرورت ایسی

    جانے ہو ریت کے صحراؤں کا کیسا عالم

    جب ہے اس گلشن سرسبز میں وحشت ایسی

    سانس لیتا تھا تو دیوار گری جاتی تھی

    رات کچھ خواب میں دیکھی تھی عمارت ایسی

    دل کے ویرانے میں کیوں حشر بپا ہے راحتؔ

    روز ہوتی ہے زمانے میں قیامت ایسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY