کاندھوں سے زندگی کو اترنے نہیں دیا

امیر امام

کاندھوں سے زندگی کو اترنے نہیں دیا

امیر امام

MORE BYامیر امام

    کاندھوں سے زندگی کو اترنے نہیں دیا

    اس موت نے کبھی مجھے مرنے نہیں دیا

    پوچھا تھا آج میرے تبسم نے اک سوال

    کوئی جواب دیدۂ تر نے نہیں دیا

    تجھ تک میں اپنے آپ سے ہو کر گزر گیا

    رستہ جو تیری راہ گزرنے نہیں دیا

    کتنا عجیب میرا بکھرنا ہے دوستو

    میں نے کبھی جو خود کو بکھرنے نہیں دیا

    ہے امتحان کون سا صحرائے زندگی

    اب تک جو تیرے خاک بسر نے نہیں دیا

    یارو امیرؔ امام بھی اک آفتاب تھا

    پر اس کو تیرگی نے ابھرنے نہیں دیا

    RECITATIONS

    امیر امام

    امیر امام

    امیر امام

    کاندھوں سے زندگی کو اترنے نہیں دیا امیر امام

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY