کب تک تصورات میں دل کو لہو کریں

اسرارالحق اسرار

کب تک تصورات میں دل کو لہو کریں

اسرارالحق اسرار

MORE BYاسرارالحق اسرار

    کب تک تصورات میں دل کو لہو کریں

    آ اے شب فراق کوئی گفتگو کریں

    دنیائے حادثات کی نیرنگیوں کی خیر

    کیونکر نگاہ ناز تری آرزو کریں

    اپنی وفا کا ذکر تیری بے رخی کی بات

    تو سن سکے تو آج ترے روبرو کریں

    پھر بھر گئے ہیں زخم دل ناصبور کے

    جی چاہتا ہے پھر سے تری جستجو کریں

    پھیلے ہوئے ہیں سلسلے وحشت کے دور تک

    دامان زندگی کو کہاں تک رفو کریں

    ہم نے بنا لیا ہے نیا پھر سے آشیاں

    اسرارؔ بجلیوں سے چلو گفتگو کریں

    مآخذ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY