Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کبھی ساون کی جھڑی ہو کبھی بھادوں برسے

آغا شاعر قزلباش

کبھی ساون کی جھڑی ہو کبھی بھادوں برسے

آغا شاعر قزلباش

MORE BYآغا شاعر قزلباش

    کبھی ساون کی جھڑی ہو کبھی بھادوں برسے

    ایسا برسے مرے اللہ کہ چھاجوں برسے

    ماشاء اللہ یہ لڑیاں تری اے ابر بہار

    جی میں آتا ہے اسی طرح مہینوں برسے

    تیر باراں ہے یہ بے وقت کا مینہ توبہ ہے

    یوں نہ برسے کبھی جب وہ مرے گھر ہوں برسے

    بس خدا کے لیے بس اب نہ کہوں گا کچھ بھی

    گھنٹوں بوچھاڑ ہوئی آپ تو پہروں برسے

    جب جوانی کی ترنگیں ہی نہیں ہیں شاعرؔ

    دھوپ نکلے کہیں کیوں ابر کہیں کیوں برسے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے