کبھی عروج کبھی وہ زوال دیتا ہے

نہال رضوی

کبھی عروج کبھی وہ زوال دیتا ہے

نہال رضوی

MORE BYنہال رضوی

    کبھی عروج کبھی وہ زوال دیتا ہے

    کوئی تو ہے جو فلک پر اچھال دیتا ہے

    وہی تو سنگ تراشوں کا دست پنہاں ہے

    وہی تو سیپ سے موتی نکال دیتا ہے

    عذاب لگنے لگے جب حیات تب بھی وہی

    فشار زیست سے آ کر نکال دیتا ہے

    اسی پہ مجھ کو بھروسہ ہے دیکھیے کیا ہو

    جو روز اک نیا فتنہ اچھال دیتا ہے

    نفس نفس پہ مرے اختیار ہے جس کا

    وہ مجھ کو ہجر بھی مثل وصال دیتا ہے

    تم اس کا دائرۂ اختیار کیا جانو

    وہ پتھروں سے بھی آنسو نکال دیتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY