کہاں کچھ بھی ادھورا چاہتا ہوں

ابھے کمار بیباک

کہاں کچھ بھی ادھورا چاہتا ہوں

ابھے کمار بیباک

MORE BYابھے کمار بیباک

    کہاں کچھ بھی ادھورا چاہتا ہوں

    تھکا ہوں اور تھکنا چاہتا ہوں

    یہ ممکن تو نہیں پر کیا برا ہے

    جا سب اچھا ہی اچھا چاہتا ہوں

    سمندر چھوڑ کر صحرا میں آیا

    یہاں دریا ہی دریا چاہتا ہوں

    جہاں یہ چاند دیکھا جا رہا ہے

    وہاں سورج اگانا چاہتا ہوں

    مجھے حاصل نہیں کچھ زندگی سے

    مگر کیوں اور جینا چاہتا ہوں

    مجھے ببیاکؔ کب معلوم ہوگا

    کہ آخر خود سے میں کیا چاہتا ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY