کہاں نصیب زمرد کو سرخ روئی یہ (ردیف .. ی)

سید محمد عبد الغفور شہباز

کہاں نصیب زمرد کو سرخ روئی یہ (ردیف .. ی)

سید محمد عبد الغفور شہباز

MORE BYسید محمد عبد الغفور شہباز

    کہاں نصیب زمرد کو سرخ روئی یہ

    سمجھ میں لعل کی اب تک حنا نہیں آئی

    خجل ہے آنکھوں سے نرگس گلاب گالوں سے

    وہ کون پھول ہے جس کو حیا نہیں آئی

    امڈ رہا ہے پڑا دل میں شوق زلفوں کا

    یہ جھوم جھوم کے کالی گھٹا نہیں آئی

    ہو جس سے آگے وہ بت ہم سے ہم سخن واعظ

    کہیں حدیث میں ایسی دعا نہیں آئی

    زباں پہ اس کی ہے ہر دم مری بلا آئے

    بلا بھی آئے تو سمجھو بلا نہیں آئی

    شب فراق کا چھایا ہوا ہے رعب ایسا

    بلا بلا کے تھکے ہم قضا نہیں آئی

    نظر ہے یار کی شہبازؔ کیمیا تاثیر

    پر اپنے حصے میں یہ کیمیا نہیں آئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY