کہیں حسن کا تقاضا کہیں وقت کے اشارے

شکیل بدایونی

کہیں حسن کا تقاضا کہیں وقت کے اشارے

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    کہیں حسن کا تقاضا کہیں وقت کے اشارے

    نہ بچا سکیں گے دامن غم زندگی کے مارے

    شب غم کی تیرگی میں مری آہ کے شرارے

    کبھی بن گئے ہیں آنسو کبھی بن گئے ہیں تارے

    نہ خلش رہی وہ مجھ میں نہ کشش رہی وہ مجھ میں

    جسے زعم عاشقی ہو وہی اب تجھے پکارے

    جنہیں ہو سکا نہ حاصل کبھی کیف قرب منزل

    وہی دو قدم ہیں مجھ کو تری جستجو سے پیارے

    میں شکیلؔ ان کا ہو کر بھی نہ پا سکا ہوں ان کو

    مری طرح زندگی میں کوئی جیت کر نہ ہارے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Shakiil Badaayuuni (Pg. 747)
    • Author : Shakiil Badaayuuni
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY