کہو بتوں سے کہ ہم طبع سادہ رکھتے ہیں

سید عابد علی عابد

کہو بتوں سے کہ ہم طبع سادہ رکھتے ہیں

سید عابد علی عابد

MORE BYسید عابد علی عابد

    کہو بتوں سے کہ ہم طبع سادہ رکھتے ہیں

    پھر ان سے عرض وفا کا ارادہ رکھتے ہیں

    یہی خطا ہے کہ اس گیر و دار میں ہم لوگ

    دل شگفتہ جبین کشادہ رکھتے ہیں

    خدا گواہ کہ اصنام سے ہے کم رغبت

    صنم گری کی تمنا زیادہ رکھتے ہیں

    دکان بادہ فروشاں کے صحن میں عابدؔ

    فرشتے خلد کا اک در کشادہ رکھتے ہیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کہو بتوں سے کہ ہم طبع سادہ رکھتے ہیں نعمان شوق

    مآخذ
    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 697)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY