کئی دن ہو گئے یارب نہیں دیکھا ہے یار اپنا

تاباں عبد الحی

کئی دن ہو گئے یارب نہیں دیکھا ہے یار اپنا

تاباں عبد الحی

MORE BY تاباں عبد الحی

    کئی دن ہو گئے یارب نہیں دیکھا ہے یار اپنا

    ہوا معلوم یوں شاید کیا کم ان نے پیار اپنا

    ہوا بھی عشق کی لگنے نہ دیتا میں اسے ہرگز

    اگر اس دل پہ ہوتا ہائے کچھ بھی اختیار اپنا

    یہ دونو لازم و ملزوم ہیں گویا کہ آپس میں

    نہ یار اپنا کبھو ہوتے سنانے روزگار اپنا

    ہوا ہوں خاک اس کے غم میں تو بھی سینہ صافی سے

    نہیں کھوتا ہے وہ آئینہ رو دل سے غبار اپنا

    یہ شعلہ سا تمہارا رنگ کچھ زور ہی جھمکتا ہے

    جلا کیوں کر نہ دوں میں خرمن صبر و قرار اپنا

    سر فتراک تھا اس کو نہ تھا لیکن نصیبوں میں

    تڑپتا چھوڑ کر جاتا رہا ظالم شکار اپنا

    تجھے لازم ہے ہونا مہرباں تاباںؔ پہ اے ظالم

    کہ ہے بیتاب اپنا عاشق اپنا بے قرار اپنا

    مآخذ:

    Deewan-e-Taban Rekhta Website)
    • Deewan-e-Taban Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY