کیسا جشن بہار ہے اپنا

کیلاش ماہر

کیسا جشن بہار ہے اپنا

کیلاش ماہر

MORE BYکیلاش ماہر

    کیسا جشن بہار ہے اپنا

    گل پہ سایہ بھی بار ہے اپنا

    سسکیاں لے رہی ہے شام فراق

    پھر مجھے انتظار ہے اپنا

    عشق کا راگ کس نے چھیڑ دیا

    ہر نفس شعلہ بار ہے اپنا

    کیا گلہ تیری کم نگاہی سے

    کب ہمیں اعتبار ہے اپنا

    نیچی نظروں سے پوچھ مت احوال

    ضبط غم ہی شعار ہے اپنا

    کیا ہوا زندگی نہ راس آئی

    موت پر اعتبار ہے اپنا

    قیس کو لوگ جب سے بھول گئے

    پیرہن تار تار ہے اپنا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY