کیسا مکان سایۂ دیوار بھی نہیں

فضیل جعفری

کیسا مکان سایۂ دیوار بھی نہیں

فضیل جعفری

MORE BYفضیل جعفری

    کیسا مکان سایۂ دیوار بھی نہیں

    جیتے ہیں زندگی سے مگر پیار بھی نہیں

    اٹھتی نہیں ہے ہم پہ کوئی مہرباں نگاہ

    کہنے کو شہر محفل اغیار بھی نہیں

    گزری ہے یوں تو دشت میں تنہائیوں کے عمر

    دل بے نیاز کوچہ و بازار بھی نہیں

    رک رک کے چل رہے ہیں کہ منزل نہیں کوئی

    ہر کوچہ ورنہ کوچۂ دل دار بھی نہیں

    آگے بڑھائیے تو قدم آپ جعفریؔ

    دنیا اب ایسی وادیٔ پر خار بھی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY