کیسے چھپاؤں راز غم دیدۂ تر کو کیا کروں

حسرتؔ موہانی

کیسے چھپاؤں راز غم دیدۂ تر کو کیا کروں

حسرتؔ موہانی

MORE BY حسرتؔ موہانی

    کیسے چھپاؤں راز غم دیدۂ تر کو کیا کروں

    دل کی تپش کو کیا کروں سوز جگر کو کیا کروں

    شورش عاشقی کہاں اور میری سادگی کہاں

    حسن کو تیرے کیا کہوں اپنی نظر کو کیا کروں

    غم کا نہ دل میں ہو گزر وصل کی شب ہو یوں بسر

    سب یہ قبول ہے مگر خوف سحر کو کیا کروں

    حال میرا تھا جب بتر تب نہ ہوئی تمہیں خبر

    بعد میرے ہوا اثر اب میں اثر کو کیا کروں

    مآخذ:

    • کتاب : Junoon (Pg. 100)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY