کل رات سونی چھت پہ عجب سانحہ ہوا

محمد علوی

کل رات سونی چھت پہ عجب سانحہ ہوا

محمد علوی

MORE BY محمد علوی

    کل رات سونی چھت پہ عجب سانحہ ہوا

    جانے دو یار کون بتائے کہ کیا ہوا

    نظروں سے ناپتا ہے سمندر کی وسعتیں

    ساحل پہ اک شخص اکیلا کھڑا ہوا

    لمبی سڑک پہ دور تلک کوئی بھی نہ تھا

    پلکیں جھپک رہا تھا دریچہ کھلا ہوا

    مانا کہ تو ذہین بھی ہے خوب رو بھی ہے

    تجھ سا نہ میں ہوا تو بھلا کیا برا ہوا

    دن ڈھل رہا تھا جب اسے دفنا کے آئے تھے

    سورج بھی تھا ملول زمیں پر جھکا ہوا

    کیا ظلم ہے کہ شہر میں رہنے کو گھر نہیں

    جنگل میں پیڑ پیڑ پہ تھا گھر بنا ہوا

    علویؔ غزل کا خبط ابھی کم نہیں ہوا

    جائے گا جی کے ساتھ یہ ہوکا لگا ہوا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY