کلیجا منہ کو آتا ہے شب فرقت جب آتی ہے

آسی غازی پوری

کلیجا منہ کو آتا ہے شب فرقت جب آتی ہے

آسی غازی پوری

MORE BYآسی غازی پوری

    کلیجا منہ کو آتا ہے شب فرقت جب آتی ہے

    اکیلے منہ لپیٹے روتے روتے جان جاتی ہے

    لب نازک کے بوسے لوں تو مسی منہ بناتی ہے

    کف پا کو اگر چوموں تو مہندی رنگ لاتی ہے

    دکھاتی ہے کبھی بھالا کبھی برچھی لگاتی ہے

    نگاہ ناز جاناں ہم کو کیا کیا آزماتی ہے

    وہ بکھرانے لگے زلفوں کو چہرے پر تو میں سمجھا

    گھٹا میں چاند یا محمل میں لیلیٰ منہ چھپاتی ہے

    کرے گی اپنے ہاتھوں آج اپنا خون مشاطہ

    بہت رچ رچ کے تلووں میں ترے مہندی لگاتی ہے

    نہ کوئی زور اس عیار پر اب تک چلا اپنا

    یہاں دم ٹوٹتا ہے اور دم میں جان جاتی ہے

    تڑپنا تلملانا لوٹنا سر پیٹنا رونا

    شب فرقت اکیلی جان پر سو آفت آتی ہے

    پچھاڑیں کھا رہا ہوں لوٹتا ہوں درد فرقت سے

    اجل کے پاؤں ٹوٹیں کیوں نہیں اس وقت آتی ہے

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    کلیجا منہ کو آتا ہے شب فرقت جب آتی ہے فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY