کر کے بیمار دی دوا تو نے

الطاف حسین حالی

کر کے بیمار دی دوا تو نے

الطاف حسین حالی

MORE BYالطاف حسین حالی

    کر کے بیمار دی دوا تو نے

    جان سے پہلے دل لیا تو نے

    رہرو تشنہ لب نہ گھبرانا

    اب لیا چشمۂ بقا تو نے

    شیخ جب دل ہی دیر میں نہ لگا

    آ کے مسجد سے کیا لیا تو نے

    دور ہو اے دل مآل اندیش

    کھو دیا عمر کا مزا تو نے

    ایک بیگانہ وار کر کے نگاہ

    کیا کیا چشم آشنا تو نے

    دل و دیں کھو کے آئے تھے سوئے دیر

    یاں بھی سب کچھ دیا خدا تو نے

    خوش ہے امید خلد پر حالیؔ

    کوئی پوچھے کہ کیا کیا تو نے

    RECITATIONS

    خالد مبشر

    خالد مبشر,

    خالد مبشر

    کر کے بیمار دی دوا تو نے خالد مبشر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY