کرتا ہوں تیرے ظلم سے ہر بار الغیاث

محمد رفیع سودا

کرتا ہوں تیرے ظلم سے ہر بار الغیاث

محمد رفیع سودا

MORE BYمحمد رفیع سودا

    کرتا ہوں تیرے ظلم سے ہر بار الغیاث

    یک بار تیرے دل میں نہیں کار الغیاث

    تیری نگہ کو دیکھ کے گردش میں آسمان

    کرتا پھرے ہے شعبدہ دوار الغیاث

    مغرور حسن کا ہے تجھے یہ کہاں خبر

    یعنی کہ کون ہے پس دیوار الغیاث

    سوداؔ میں کہتا ہوں کہ یہ پرہیز عشق سے

    رسوا ہے کیوں تو کوچہ و بازار الغیاث

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY