aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

خامشی ہی خامشی میں داستاں بنتا گیا

جنبش خیرآبادی

خامشی ہی خامشی میں داستاں بنتا گیا

جنبش خیرآبادی

MORE BYجنبش خیرآبادی

    خامشی ہی خامشی میں داستاں بنتا گیا

    میرا ہر آنسو مرے غم کی زباں بنتا گیا

    آپ کا غم جب شریک قلب و جاں بنتا گیا

    اشک کا ہر قطرہ بحر بیکراں بنتا گیا

    ظلم ٹوٹا ہی کیے قائم رہی شان عمل

    بجلیاں گرتی رہیں اور آشیاں بنتا گیا

    دھیرے دھیرے یاد ان کی دل میں گھر کرتی رہی

    رفتہ رفتہ عشق ان کا جزو جاں بنتا گیا

    میری ہستی بھی ترے جلووں میں گم ہوتی گئی

    تیرا جلوہ بھی فروغ لا مکاں بنتا گیا

    رنگ لایا اس قدر ذوق جبین بندگی

    ہر نشان سجدہ تیرا آستاں بنتا گیا

    جب تک اے جنبشؔ رہے وہ مائل لطف و کرم

    ہر نفس اک زندگئ جاوداں بنتا گیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے