خود کسی سطح پہ آنے میں بڑا وقت لگا

وقار مانوی

خود کسی سطح پہ آنے میں بڑا وقت لگا

وقار مانوی

MORE BYوقار مانوی

    خود کسی سطح پہ آنے میں بڑا وقت لگا

    اپنی پہچان بنانے میں بڑا وقت لگا

    خواہش دید کے اظہار میں بھی دیر لگی

    ان کو بھی پردہ اٹھانے میں بڑا وقت لگا

    گھر سے ہجرت پہ نکل جانا تھا لمحوں کا عمل

    پھر کہیں بسنے بسانے میں بڑا وقت لگا

    تعزیت کیجیے اب وقت عیادت تو گیا

    آپ آئے مگر آنے میں بڑا وقت لگا

    برق نے پھونک دیا تھا جسے آناً‌ فاناً

    اس نشیمن کو بنانے میں بڑا وقت لگا

    ساعت عیش کے ارماں کا نتیجہ معلوم

    غم سے دامن کو چھڑانے میں بڑا وقت لگا

    کیسے حالات کی دلدل سے نکلتے کہ وقارؔ

    پاؤں بھی ہم کو جمانے میں بڑا وقت لگا

    مآخذ :
    • کتاب : Waqar-e-Hunar (Pg. 106)
    • Author : Mohammad Zahiir
    • مطبع : Waqar Manvi, Sui walan, Darya Ganj, Delhi (1998)
    • اشاعت : 1998

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY