خواب ڈستے رہے بکھرتے رہے

طاہرہ جبین تارا

خواب ڈستے رہے بکھرتے رہے

طاہرہ جبین تارا

MORE BY طاہرہ جبین تارا

    خواب ڈستے رہے بکھرتے رہے

    کرب کے لمحے یوں گزرتے رہے

    کھو گئے یار ہم سفر بچھڑے

    دل میں دکھ ہجر کے اترتے رہے

    ہے یہی ایک زیست کا درماں

    اشک آنکھوں کے دل میں گرتے رہے

    چھا گئیں ظلمتیں زمانے میں

    لاشے ہر سمت ہی بکھرتے رہے

    لاکھ ہم تجھ کو بھولنا چاہیں

    نقش مٹ مٹ کے پھر ابھرتے رہے

    درد کی چوٹ دل پہ پڑتی رہی

    ہر گھڑی زخم دل نکھرتے رہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY