خواب نگر کے شہزادے نے ایسے بھی نروان لیا

ذاکر خان ذاکر

خواب نگر کے شہزادے نے ایسے بھی نروان لیا

ذاکر خان ذاکر

MORE BYذاکر خان ذاکر

    خواب نگر کے شہزادے نے ایسے بھی نروان لیا

    چاند سجایا آنکھوں میں اور رات کو سر پر تان لیا

    دنیا داری کھیل تماشہ عشق و محبت راحت جاں

    آگ میں اپنی جل کر ہم نے بن برگد یہ گیان لیا

    وہ آنکھیں ہی ایسی تھیں ہم ڈوب گئے انجانے میں

    جان کے کس نے ٹوٹی پھوٹی کشتی میں طوفان لیا

    کون سا پردا ہم سے تھا تم دل کی باتیں کہہ سکتے تھے

    مفت میں تم نے بات بڑھائی غیروں کا احسان لیا

    حرص و ہوس کا دور ہے اس میں بکتے ہیں سب رشتے ناطے

    جان پہ اپنی کیوں کر تم نے اوروں کا بہتان لیا

    واقف کب تھا پیار سے پہلے لیکن ذاکرؔ پیار کے بعد

    قسمت ریکھا حسن و ادا اور ناز و جفا سب جان لیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY