Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کس کو فرصت کون پڑھے گا چہرے جیسا سچا سچ

بدر واسطی

کس کو فرصت کون پڑھے گا چہرے جیسا سچا سچ

بدر واسطی

MORE BYبدر واسطی

    کس کو فرصت کون پڑھے گا چہرے جیسا سچا سچ

    روز عدالت میں چلتا ہے کھوٹا سکہ جھوٹا سچ

    اونچے خوابوں کے تاجر سے کوئی نہیں یہ پوچھنے والا

    کون جوانوں کے چہروں پر لکھ دیتا ہے پیلا سچ

    ہم سے کیا پوچھو گے صاحب شہر کبھی کا ٹوٹ چکا

    شام کی میلی چادر پر ہے ٹکڑے ٹکڑے پھیلا سچ

    ان آنکھوں میں مستقبل کے خواب بھلا کیا اتریں گے

    جن آنکھوں نے دیکھ لیا ہے وقت سے پہلے نیلا سچ

    اس کے بیٹا بیٹی کالج اسی طرف سے جاتے ہیں

    رات کو جس نے بیچ سڑک پر پھینکا ہے اک گیلا سچ

    سب نے ہم کو خوشحالی کے خواب دکھا کر چھوڑ دیا

    گلیوں گلیوں گھوم رہا ہے دھول میں لپٹا ننگا سچ

    بدرؔ تمہاری راہ میں آ کر دنیا جال بچھائے گی

    جو کہتے ہو کہتے رہنا چھوڑ نہ دینا لکھنا سچ

    مأخذ :
    • کتاب : TO MAIN KAHAN HOON (POETRY) (Pg. 16)
    • Author : Badr Wasti
    • مطبع : Madhya Pradesh Urdu Academy (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے