کس نے سنایا اور سنایا تو کیا سنا

حسن بریلوی

کس نے سنایا اور سنایا تو کیا سنا

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    کس نے سنایا اور سنایا تو کیا سنا

    سنتا ہوں آج تو نے مرا ماجرا سنا

    ایسے سے دل کا حال کہیں بھی تو کیا کہیں

    جو بے کہے کہے کہ چلو بس سنا سنا

    وصل عدو کا حال سنانے سے فائدہ

    اللہ رحم کیجئے بس بس سنا سنا

    قاصد ترے سکوت سے دل بے قرار ہے

    کیا اس جفا شعار نے تجھ سے کہا سنا

    آخر حسنؔ وہ روٹھ گئے اٹھ کے چل دیے

    کم بخت اور حال دل مبتلا سنا

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 127)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY