aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کسے خبر کہ ہے کیا کیا یہ جان تھامے ہوئے

عظیم حیدر سید

کسے خبر کہ ہے کیا کیا یہ جان تھامے ہوئے

عظیم حیدر سید

MORE BYعظیم حیدر سید

    کسے خبر کہ ہے کیا کیا یہ جان تھامے ہوئے

    زمین تھامے ہوئے آسمان تھامے ہوئے

    فضائیں کچھ بھی نہیں ہیں فقط نظر کا فریب

    کھڑا ہوا ہے کوئی آسمان تھامے ہوئے

    سفینہ موجۂ سیل بلا سے گرم ستیز

    ہوا کا بار گراں بادبان تھامے ہوئے

    گرا ہے کوئی جری اے فصیل شہر تباہ

    مزاحمت کا دریدہ نشان تھامے ہوئے

    سڑک کے پار چلا جا رہا ہے بچتا ہوا

    کسی کا ہاتھ کوئی مہربان تھامے ہوئے

    عجب طلسم سا منظر ہے بھیگتی ہوئی شام

    کوئی پری ہے دھنک کی کمان تھامے ہوئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے