کسی کا دل کو رہا انتظار ساری رات

امداد امام اثرؔ

کسی کا دل کو رہا انتظار ساری رات

امداد امام اثرؔ

MORE BYامداد امام اثرؔ

    کسی کا دل کو رہا انتظار ساری رات

    فلک کو دیکھا کئے بار بار ساری رات

    تڑپ تڑپ کے تمنا میں کروٹیں بدلیں

    نہ پایا دل نے ہمارے قرار ساری رات

    ادھر تو شمع تھی گریاں ادھر تھے ہم گریاں

    اسی طرح پہ رہے اشک بار ساری رات

    خیال شمع رخ یار میں جلے تا صبح

    لیا قرار نہ پروانہ وار ساری رات

    نہ پوچھ سوز جدائی کو ہم سے اے ہم دم

    جلا کیا یہ دل داغ دار ساری رات

    مژہ کے عشق سے آئی نہ نیند آنکھوں میں

    نظر کھٹکتی رہی بن کے خار ساری رات

    خیال زلف سیہ میں بہا کئے آنسو

    بندھا رہا مرے رونے کا تار ساری رات

    نہ پوچھ ہم سے اثرؔ رات کس طرح کاٹی

    عجب طرح کا رہا انتشار ساری رات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے