کسی کو جب نگاہوں کے مقابل دیکھ لیتا ہوں

شکیل بدایونی

کسی کو جب نگاہوں کے مقابل دیکھ لیتا ہوں

شکیل بدایونی

MORE BY شکیل بدایونی

    کسی کو جب نگاہوں کے مقابل دیکھ لیتا ہوں

    تو پہلے سر جھکا کے حالت دل دیکھ لیتا ہوں

    مآل جستجوئے ذوق کامل دیکھ لیتا ہوں

    اٹھاتے ہی قدم آثار منزل دیکھ لیتا ہوں

    میں تجھ سے اور لطف خاص کا طالب معاذ اللہ

    ستمگر اس بہانے سے ترا دل دیکھ لیتا ہوں

    جو موجیں خاص کر چشم و چراغ دام طوفاں ہیں

    میں ان موجوں کو ہم آغوش ساحل دیکھ لیتا ہوں

    شکیلؔ احساس ہے مجھ کو ہر اک موزوں طبیعت کا

    غزل پڑھنے سے پہلے رنگ محفل دیکھ لیتا ہوں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کسی کو جب نگاہوں کے مقابل دیکھ لیتا ہوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY