کسی طرح بھی تو وہ راہ پر نہیں آیا

آفتاب حسین

کسی طرح بھی تو وہ راہ پر نہیں آیا

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    کسی طرح بھی تو وہ راہ پر نہیں آیا

    ہمارے کام ہمارا ہنر نہیں آیا

    وہ یوں ملا تھا کہ جیسے کبھی نہ بچھڑے گا

    وہ یوں گیا کہ کبھی لوٹ کر نہیں آیا

    ہم آپ اپنا مقدر سنوار لیتے مگر

    ہمارے ہاتھ کف کوزہ گر نہیں آیا

    خبر تو تھی کہ مآل سفر ہے کیا لیکن

    خیال ترک سفر عمر بھر نہیں آیا

    میں اپنی آنکھ کے روزن سے دیکھ سکتا ہوں

    وہ پھول بھی جو ابھی شاخ پر نہیں آیا

    ابھی دلوں کی طنابوں میں سختیاں ہیں بہت

    ابھی ہماری دعا میں اثر نہیں آیا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کسی طرح بھی تو وہ راہ پر نہیں آیا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY