کتاب شوق میں ان بند باب آنکھوں کو

عبدالسلام عاصم

کتاب شوق میں ان بند باب آنکھوں کو

عبدالسلام عاصم

MORE BYعبدالسلام عاصم

    کتاب شوق میں ان بند باب آنکھوں کو

    نہ سہل جان مری جان خواب آنکھوں کو

    میں اب بھی پڑھتا ہوں تزئین شعر و فن کے لئے

    تمام رات تری خوش نصاب آنکھوں کو

    قلم امانت حق تھا سو لکھ دیا میں نے

    شگفتہ لمس لبوں کو شراب آنکھوں کو

    یہ فاصلوں کی حقیقت یہ قربتوں کا طلسم

    عذاب ہیں یہ تعلق کے خواب آنکھوں کو

    خموشیوں کی بھی اپنی زبان ہوتی ہے

    کہ مل ہی جاتا ہے عاصمؔ جواب آنکھوں کو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY