کتنی زلفیں اڑیں کتنے آنچل اڑے چاند کو کیا خبر

وصی شاہ

کتنی زلفیں اڑیں کتنے آنچل اڑے چاند کو کیا خبر

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    کتنی زلفیں اڑیں کتنے آنچل اڑے چاند کو کیا خبر

    کتنا ماتم ہوا کتنے آنسو بہے چاند کو کیا خبر

    مدتوں اس کی خواہش سے چلتے رہے ہاتھ آتا نہیں

    چاہ میں اس کی پیروں میں ہیں آبلے چاند کو کیا خبر

    وہ جو نکلا نہیں تو بھٹکتے رہے ہیں مسافر کئی

    اور لٹتے رہے ہیں کئی قافلے چاند کو کیا خبر

    اس کو دعویٰ بہت میٹھے پن کا وصیؔ چاندنی سے کہو

    اس کی کرنوں سے کتنے ہی گھر جل گئے چاند کو کیا خبر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے