کیا شباب نے برباد روزگار مجھے

حرماں خیرآبادی

کیا شباب نے برباد روزگار مجھے

حرماں خیرآبادی

MORE BYحرماں خیرآبادی

    کیا شباب نے برباد روزگار مجھے

    پیام مرگ ہوئی دعوت بہار مجھے

    اگر کہوں کہ نہ آئے کبھی قرار مجھے

    اب اس قدر بھی نہیں دل پہ اختیار مجھے

    نشاط دہر ابھی درد سے بدل جائے

    ملا ہے ضبط محبت کا اختیار مجھے

    اگر ہے معنیٔ دیدار خاک ہو جانا

    بنا دے اپنی تجلی کی یادگار مجھے

    رہے گا عہد گزشتہ سے اک گلہ حرماںؔ

    جہاں میں چھوڑ گیا کر کے سوگوار مجھے

    مأخذ :
    • کتاب : Scan File Mail By Salim Saleem

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY